دس کروڑ انسانو

زندگی سے بیگانو

das karror insāno

zindagī se begāno

صرف چند لوگوں نے

حق تمہارا چھینا ہے

sirf chand logoñ ne

haq tumhārā chhīnā hai

خاک ایسے جینے پر

یہ بھی کوئی جینا ہے

ḳhaak aise jiine par

ye bhī koī jiinā hai

بے شعور بھی تم کو

بے شعور کہتے ہیں

be-shu.ūr bhī tum ko

be-shu.ūr kahte haiñ

سوچتا ہوں یہ ناداں

کس ہوا میں رہتے ہیں

sochtā huuñ ye nādāñ

kis havā meñ rahte haiñ

اور یہ قصیدہ گو

فکر ہے یہی جن کو

aur ye qasīda-go

fikr hai yahī jin ko

ہاتھ میں علم لے کر

تم نہ اٹھ سکو لوگو

haath meñ alam le kar

tum na uTh sako logo

کب تلک یہ خاموشی

چلتے پھرتے زندانو

kab talak ye ḳhāmoshī

chalte-phirte zindano

دس کروڑ انسانو

das karror insāno!

 

Share: